انڈونیشیا ۔ طاقتور زلزلہ ۔ ۔ ۔ ١٠افراد ہلاک ، سینکڑوں عمارتیں تباہ

جکارتہ (ثناء نیوز) انڈونیشیا کے جزیرے سماٹرا میں ایک اور طاقت ور زلزلہ آیا ہے جس میں کم از کم 10 افراد ہلاک ہو گئے ہیں جبکہ متعدد عمارتوں کو نقصان پہنچا ہے۔واضح رہے کہ انڈونشیا میں بدھ کو بھی ایک طاقتور زلزلہ آیا تھا جو دنیا میں اس سال آنے والا اب تک کا انتہائی طاقتور زلزلہ تھا جس سے بڑے پیمانے پر تباہی ہوئی ہے تاہم اس تباہی کا اندازہ لگانا ابھی انتہائی مشکل ہے۔ حکام کے مطابق کم از کم چالیس افراد زخمی ہوئے ہیں اور سینکڑوں عمارتیں تباہ ہوگئی ہیں۔انڈونیشیا کے ساحلی علاقوں میں بار بار سونامی کی وارننگز دی جاتی رہیں لیکن بعد ازاں انہیں منسوح کردیا گیا۔ بہت سے لوگ 2004ء میں سونامی کے نتیجے میں ہونے والی تباہی کے دوبارہ ہونے کے خوف کے باعث ملک کے اندورنی حصوں میں چلے گئے تھے۔ریکٹر سکیل پر سات اعشاریہ آٹھ کی شدت سے جمعرات کو آنے والا یہ زلزلہ جنوبی سماٹرا کے اسی مقام پر آیا ہے جہاں بدھ کو آٹھ اعشاریہ چار کی شدت کا انتہائی طاقتور زلزلہ آیا تھا۔امریکی جیالوجیکل سروے کے مطابق زلزلے کا دوسرا جھٹکا جمعرات کو مقامی وقت کے مطابق چھ بج کر اننچاس منٹ پر آیا اور اس کا مرکز تقریباً دس کلومیٹر سمندر کے اندر اور جنوب مشرقی شہر پڈانگ سے تقریباً 115 کلو میٹر کی دوری پر تھا۔ زلزلے کا دوسرا جھٹکا پہلے بڑے جھٹکے سے تقریباً بارہ گھنٹے بعد آیا جبکہ پہلے جھٹکے کا مرکز تیس کلومیٹر سمندر کی تہہ میں اور جنوب مغربی شہر بینگکلو سے کوئی اسی میل دور تھا۔پڈانگ کے میئر فوزی بہر نے خبر رساں ادارے کو بتایا کہ’جمعرات کی صبح آنے والے زلزے میں کئی عمارتیں زمین بوس ہو گئی ہیں۔ ہم ابھی تک متاثرین کی تلاش کے کام میں مصروف ہیں۔ابتدائی اندازوں کے برعکس ہلاکتوں کی تعداد میں اضافے کا خدشہ نظر نہیںآتا تاہم حکام نے خبردار کیا ہے کہ متاثرہ علاقے میں رابطے کی خراب صورت حال کے پیش نظر زلزلے سے ہونے والی تباہی کا اندازہ لگانا ابھی مشکل ہے۔دارالحکومت جکارتہ میں محکمہ صحت کے حکام کا کہنا ہے کہ امدادی ٹیمیں کھانے پینے اور ادویات کے ہمراہ متاثرہ علاقے میں بھیجی جا رہی ہیں۔ صدر سوسیلو بمبینگ یودھویونو نے فوج اور پولیس کی ہنگامی امدادی ٹیموں کی تشکیل کے احکامات جاری کیے ہیں۔اقوام متحدہ کا کہنا ہے کہ اس کے امدادی کارکن بھی سماٹرا کی طرف جار ہے ہیں۔بدھ کو آنے والے زلزلے کے بعد بحر ہند میں وارننگ کا سلسلہ شروع ہوگیا تھا تاہم ابتداء میں سماٹرا کے ایک میل کے علاقے میں زلزلے کا ہلکا جھٹکا محسوس کیا گیا جس سے محدود پیمانے پر تباہی ہوئی اور اس کے کوئی دو گھنٹے بعد انڈونیشیا کے محکمہ موسمیات نے بتایا کہ انتہائی نوعیت کی سونامی کا خطرہ ٹل گیا ہے۔ اطلاعات کے مطابق پہلے نبستاً ہلکے جھٹکے کے بعد زلزلے کے کوئی درجن بھر جھٹکے محسوس کیے گئے۔ سونامی کی چار مختصر وارننگز کا اعلان کیا گیا تاہم بعد میں انہیں منسوخ کردیا گیا۔ساحل پر رہنے والے افراد سے کہا گیا کہ وہ اپنے گھروں کو چھوڑ کر اندرونی حصوں میں چلے جائیں۔ اطلاعات کے مطابق بینگکلو اور پڈانگ میں زلزلے کے خوف سے ہزاروں افراد نے گزشتہ رات کھلے آسمان تلے گزاری۔2004ء میں سونامی کے بعد بدھ کو آنے والا زلزلہ انڈونشیا میں اب تک زلزلے کے سب سے طاقتور جھٹکوں میں سے ایک تھا۔ سونامی کی وجہ بننے والا زلزلہ جس کی شدت ریکٹر سکیل پر آٹھ اعشاریہ نو تھی اور اس کا مرکز شمالی سماٹرا کا صوبہ آچے تھا۔ بحر ہند کی پٹی سے ٹکرانے والے اس زلزلے میں دو لاکھ بیس ہزار افراد ہلاک ہوئے تھے۔ واضح رہے کہ اتنی شدت کے زلزلے ذرا کم ہی آتے ہیں تاہم2004ء میں سونامی سے آنے والی تباہی لوگوں کے ذہنوں میں تازہ ہے جس کے پیش نظر لوگ خوف زدہ ہو گئے ہیں۔

Share

Leave a Reply