صدر مشرف ،نیگرو پونٹے ملاقات ۔صدارتی الیکشن سمیت تمام امور آئین اور قانون کے مطابق نمٹائے جائیں گے، جنرل پرویز مشرف

مشروط امداد کے امریکی قانون کے بارے میں پاکستان کے عوام میں اچھا تاثر نہیں پایا جاتا

ملک میں اسمبلیاں اپنی مدت پوری کریں گی، عام انتخابات مقررہ وقت پر منصفانہ اورآزادانہ بنیاد پر ہوں گے

صدر مملکت سے امریکی نائب وزیر خارجہ کی ملاقات

اسلام آباد (ثناء نیوز) صدر جنرل پرویز مشرف نے کہاہے کہ ملک میں صدارتی الیکشن سمیت تمام امور آئین اور قانون کے مطابق نمٹائے جائیں گے مشروط امداد کے امریکی قانون کے بارے میں پاکستان کے عوام میں اچھا تاثر نہیں پایا جاتا۔ملک میں اسمبلیاں اپنی مدت پوری کریں گی عام انتخابات مقررہ وقت پر منصفانہ اورآزادانہ بنیاد پر ہوں گے۔ ان خیالات کا اظہار صدر نے امریکی وزیر خارجہ جان نیگرو پونٹے سے ملاقات میں کیا ۔ امریکی نائب وزیر خارجہ نے امریکی عہدیدار رچرڈ باؤچر اور امریکی سفیر این ڈبلیو پیٹرن سن کے ہمراہ ایوان صدر میں ان سے ملاقات کی ۔ملاقات میں پاک امریکہ تعلقات ، دہشت گردی کے خلاف جنگ اور علاقائی امور پر تبادلہ خیال کیاگیا ۔پاک امریکہ سٹریٹیجک ڈائیلاگ کے دوسرے مرحلے کے حوالے سے صدر مشرف نے کہاکہ پاکستان کے ساتھ امریکہ کے وسیع البنیاد اور پائیدار تعلقات ہیں ۔صدر نے کہاکہ ایسے اقدامات سے گریز کیا جانا چاہیے جس سے تعلقات خراب ہونے کا خدشہ ہو جیساکہ نائن الیون کے حوالے سے کمیشن کی سفارشات کے ایکٹ جیسے اقدامات سے گریز کیا جانا چاہیے صدر جنرل پرویز مشرف نے انتہا پسندی اور دہشت گردی کے خلاف اقدامات کو جاری رکھنے کے عزم کا اعادہ کیا۔انہوں نے دہشت گردی اور چیلنجوں سے نمٹنے کیلئے پاکستان کی طرف سے کئے جانے والے اقدامات بارے میں امریکی وزیر خارجہ کو آگاہ کیا او رکہاکہ اس بارے میں کوئی شک وشبہ نہیں ہونا چاہیے کیونکہ یہ پاکستان کے اپنے مفاد میں ہیں صدر نے فاٹا کے علاقوں میں فوجی ، سیاسی ، انتظامی اور ترقیاتی کاموں کیلئے کی گئی جامع حکمت عملی کے بارے میں بھی آگاہ کیا۔ صدر نے فاٹا کے علاقوں میں ایف سی کی تعداد بڑھانے ، فاٹا کے ترقیاتی منصوبوں اور ری کنسٹریکشن زونز کیلئے امریکی امداد کی ضرورت پر زور دیا ۔ صدر نے دونوں ممالک کے درمیان دہشت گردی کے خلاف اقدامات کے بارے میں ہم آہنگی کی ضرورت پر زور دیا۔ صدر جنرل پرویز مشرف نے کہا ہے کہ پاکستان دہشت گردی اور انتہا پسندی کے خلاف جامع حکمت عملی کے تحت مقابلہ کر رہاہے انہوں نے کہاکہ آئندہ عام انتخابات منصفانہ اور صاف وشفاف ہوں گے اور وردی کے بارے میں آئین اور قانون کے مطابق فیصلہ کیا جائے گا صدر نے کہاکہ توانائی، تعلیم ،سائنس ، ٹیکنالوجی اور اقتصادی شعبوں میں تعاون کیلئے پاک امریکی سٹریٹیجک مذاکرات کو اہم قرار دیا او رکہاکہ مذاکرات سے دونوں ملکوں کے درمیان طویل المعیاد اور وسیع البنیاد ملاقات فروغ پائیں گے ۔ صدر نے اس تاثر کو غلط قرار دیا کہ پاکستان کے قبائلی علاقے غیر ملکی دہشت گردوں کی پناہ گاہیں ہیں صدر نے کہاکہ پاکستان کی امداد کو مشروط کرنے سے متعلق امریکی قانون کے بارے میں خدشات کا اظہار کیا اور کہاکہ اس سے پاکستان کے عوام میں امریکہ کیلئے اچھا تاثر پیدا نہیں ہوا پاکستان میں سیاسی حالات کے حوالے سے صدر نے کہاکہ پاکستان میں جمہوری ادارے کام کر رہے ہیں اسمبلیاں اپنی مدت پوری کر رہی ہیں عام انتخابات مقررہ وقت پر ہوں گے جبکہ صدارتی الیکشن بھی ہو گا تمام معاملات آئین اور قانون کے مطابق نمٹائے جاویں گے امریکی نائب وزیر خارجہ نے ملاقات میں دہشت گردی کے خلاف پاکستان کے کردار کو سراہا اور کہاکہ پاک امریکہ قابل اعتماد اتحاد ہیں امریکہ پاکستان کی معاشی ، سماجی ترقی میں تعاون کرتا رہے گا ۔نائب وزیر خارجہ جان نیگرو پونٹے نے کہا کہ امریکہ پاکستان کی طرف سے دہشت گردی اور انتہا پسندی کے خلاف کئے جانے والے اقدامات کی حمایت کرتا ہے وزیر خارجہ نے فاٹا میں کئے جاناے والے اقدامات کو سراہتے ہوئے کہاکہ امریکہ فاٹا کی ترقی او رایف سی کی تعداد بڑھانے اور ری کنسریکشن زونز کے لئے 750ملین ڈالر کی امداد آئندہ پانچ سال میں دے گا علاقائی امور پر بات کرتے ہوئے صدر نے کہا کہ پاکستان افغانستان میں امن واستحکام کا خواہش مند ہے انہوں نے مشترکہ امن جرگہ میں ہونے والی پیش رفت اور اس کے بعد کئے جانے والے اقدامات کے بارے میں امریکی نائب وزیر خارجہ کو آگاہ کیا ۔ امریکی نائب وزیر خارجہ جان نیگرو پونٹے پاک امریکہ سٹریٹیجک مذاکرات کے دوسرے مرحلے کیلئے دو روزہ دورے پر پاکستان آئے تھے

Share

Leave a Reply