اوکاڑہ پرائیویٹ ہسپتال کے ڈسپنسر نے آپریشن سے پیدا ہونے والا دو دن کا بچہ اغوا کر کے فروخت کر دیا

اوکاڑہ(ثناء نیوز )اوکاڑہ کے نواح میں پرائیویٹ ہسپتال کے ڈسپنسر نے آپریشن سے پیدا ہونے والا دو دن کا بچہ اغوا کر کے فروخت کر دیا ۔ کم سن مغوی کی والدہ کادرجنوں رشتہ داروں کے ہمراہ ڈی ایس پی کے سامنے احتجاج، خواتین کی سینہ کوبی ، آہ و بکا، پولیس نے اغوا کا مقدمہ درج کر کے ملزم گرفتار کر لیا ۔ ڈی ایس پی نے تفتیشی آفیسر کو سات روزکے اندر بچہ برآمد کرنے کا حکم دے دیا۔ تفصیلات کے مطابق اوکاڑہ کے نواحی قصبہ 10 ون آرکا رہائشی محمد الیاس ولد نور محمد اپنی اہلیہ کو ڈلیوری کیس کے سلسلہ میں پرائیویٹ مقامی ہسپتال رینالہ لے کر آیا جہاں پر ڈاکٹر شوکت کیک نگرانی میں الیاس کی اہلیہ عابدہ پروین کا بڑا آپریشن کیا گیا جس سے لڑکا پیدا ہوا ۔ والدین مبارکباد دیتے ہوئے خوشی سے مٹھائیاں تقسیم کرنے لگے دور روز بعد اچانک بچے کی طبیعت خراب ہو گئی رات کے وقت ہسپتال کے ڈاکٹر شوکت نے بچے کو آکسیجن اور ڈرپ لگا کر ڈسپنسر صفدر کے حوالے کر دیا بچے کی والدہ عابدہ پرویّ سو گئی رشتہ داروں کے آنے پر بچہ غائب تھا ۔ ڈسپنسر سے استفسار کیا گیا تو وہ تسلی بخش جواب نہ دے سکا۔ ڈی ایس پی صدر یونس بٹ نے اطلاع ملنے پر فوری نوٹس لیتے ہوئے دو دن کے بچے کے اغواء کا مقدمہ درج کر کے ملزم ڈسپنسر صفدر کو گرفتار کر لیا ۔ گزشتہ روز مغوی بچے کی والدہ عابدہ پروین اس کے شوہر الیاس نے درجنوں رشتہ دار مرد و خواتین کے ہمراہ ڈی ایس پی صدر یونس بٹ کے سامنے شدید احتجاج کیا ۔خواتین نے آہ و بکا اور سینہ کوبی کرتے ہوئے موقف اختیار کیا کہ ملزم صفدر نے دو دن کے بچے کو فروخت کر دیا ہے ۔ پولیس نے ڈسپنسر صفدر کو گرفتار تو کر لیا ہے لیکن اسے خواتین کے بقول تھانہ سٹی رینالہ میں مہمان بنا کر رکھا گیا ہے ۔ ڈی ایس پیک صدر یونس بٹ نے مقدمہ کے تفتیشی کو حکم دیا کہ سات یوم کے اندر بچہ برآمد کیا جائے ورنہ اس کے خلاف سخت کارروائی ہو گی ۔ ڈی ایس پی کے دفتر میں بچے کی ماں کی چیخ و پکار نے ماحول کو افسردہ بنا دیا ۔

Share

Leave a Reply