پیپلز پارٹی اور وکلاء کے صدارتی امیدوار وجیہہ الدین احمد نے صدر مشرف کی نا اہلی کیلئے علیحدہ علیحدہ درخواستیں دائر کر دیں

اسلام آباد ۔ پاکستان پیپلز پارٹی پارلیمنٹیرین کے صدر مخدوم امین فہیم اور وکلاء کے نامزد صدارتی امیدوار جسٹس (ر) وجیہہ الدین احمد نے صدر مشرف کے کاغذات نامزدگی منظور کرنے کے الیکشن کمیشن کے فیصلے کیخلاف صدر جنرل پرویز مشرف کی نا اہلی کیلئے سپریم کورٹ میں علیحدہ علیحدہ آئینی درخواستیں دائر کر دی ہیں، آئینی درخواستوں میں چیف الیکشن کمشنر، وفاق پاکستان، صدر جنرل پرویز مشرف ، میاں محمد سومرو، چوہدری امیر حسین اور فیاض تالپور کو پارٹی بنایا گیا ہے، درخواستیں الیکشن کمیشن میں صدارتی امیدوار کی طر ف سے جنرل پرویز مشرف کیخلاف دائر کردہ اعتراضات کے مسترد کئے جانے کے بعد دائر کی گئی ہیں۔ درخواستوں میں کہا گیا ہے کہ آئین کے آرٹیکل 41(2) کے تحت صدر جنرل پرویز مشرف الیکشن لڑنے کے اہل نہیں ہیں اور آرٹیکل 62 کے تحت وہ ایماندار، امانتدار اور وعدہ وفا کرنے والے نہیں ہیں۔ چیف الیکشن کمشنر کا آرڈر آئین اور جمہوریت کیخلاف ہے۔ آئین کے آرٹیکل 63 کا اطلاق صدر جنرل پرویز مشرف پر بھی ہوتا ہے اور ملازم ہونے کی وجہ سے وہ انتخابات میں حصہ نہیں لے سکتے۔ آئین کے آرٹیکل 63(1) کا تعلق مجلس شوریٰ اور پارلیمنٹ کیلئے امیدوار کی اہلیت کے حوایل سے ہیں جس سے پری پری اور پوسٹ الیکشن کیلئے نا اہل کرتی ہے۔ جنرل پرویز مشرف چونکہ 5 س کیلئے صدر بننا چاہتے ہیں اس لئے ان کا انتخاب میں حصہ لینے سے آرٹیکل 43 روکتا ہے، درخواست میں عدالت سے استدعا کی گئی ہے کہ الیکشن کمیشن کی طرف سے جنرل پرویز مشرف کے کاغذات کی منظوری کو غیر آئینی قرار دیکر کالعدم قرار دیا جائے علاوہ ازیں انہیں صدر کے انتخاب کیلئے نا اہل قرار دیا جائے۔ جنرل پرویز مشرف کے کاغذات نامزدگی مسترد کرتے ہوئے بقیہ صدارتی انتخاب کے مرحلے کو بھی کالعدم قرار دیا جائے۔

Share

1 Trackback to "پیپلز پارٹی اور وکلاء کے صدارتی امیدوار وجیہہ الدین احمد نے صدر مشرف کی نا اہلی کیلئے علیحدہ علیحدہ درخواستیں دائر کر دیں"

  1. on January 25, 2010 at 9:07 am

Leave a Reply