سخاکوٹ میں اے پی ڈی ایم کا احتجاجی مظاہرہ

درگئی۔تحصیل درگئی سخاکوٹ میں اے پی ڈی ایم کا زبردست احتجاجی مظاہرہ۔ جماعت اسلامی و شباب ملی کے کارکنان کا مالاکنڈ لیویز کیساتھ الجھ پڑے ‘ مالاکنڈ لیویز کی بھاری نفری تعینات‘ مالاکنڈ لیویز کے صوبیدار میجر مکرم خان کی جانب سے جماعت اسلامی ، پی ایم اایل (ن)، اے این پی ، جے یو آئی ، پختون خواہ ملی عوامی پارٹی اور تحریک انصاف کے قائدین کی گرفتاریوں کی کوشش۔ سخت چیکنک کے باوجود سیاسی پارٹویوں کے ورکرز سخاکوٹ میں احتجاجی ریلی میں پہنچ گئے۔ صدر مشرف نے ملک میں ایمرجنسی نافذ کرکے عدلیہ، میڈیا اور عوام کو یرغمال بنایا ہے۔ آئین کی بحالی، عدلیہ کی آزادی، اور مشرف کی آمریت کے خاتمے تک سیاسی جنگ جاری رہے گی۔ اے پی ڈی ایم میں شامل سیاسی پارٹیوں کے قائدین رضوان للہ، نیک عمل خان ، حاجی ایصال خان ، محمد آمین، محمد طاہراور حمید خان نے احتجاجی ریلی سے خطاب ۔ تحصیل درگئی میں اے پی ڈی ایم میں شامل سیاسی قائیدین اور ورکرز نے مالاکنڈ لیویز کے رکاوٹوں اور گرفتاریوں کے لئے سخت چیکنگ کو توڑتے ہوئے کے سخاکوٹ بازار کے مین چوک میں ایک زبردست احتجاجی مظاہرہ اور احتجاجی ریلی نکالی۔جماعت اسلامی ، عوامی نیشنل پارٹی ، پاکستان مسلم لیگ(ن)، جمعیت علماء اسلام (ف)، پی نیپ، اور تحریک انصاف کے کارکنان خفیہ طور پر سخاکوٹ بازار پہنچ کر احتجاج کرنے لگے ۔مظاہرین نے سخاکوٹ بازار میں ٹریفک جام کرکے احتجاجی ریلی نکالی اور مالاکنڈ شاہراہ کو ایک گھنٹہ کیلئے بلاک کرکے شدید احتجاج کیا۔ بعد میںملاکنڈ لیویز کی بھاری نفری بھی تعینات کردی گئی مالاکنڈ لیویز کے صوبیدار میجر مکرم خان بھی اس موقع پر پہنچ گئے اس موقع پراحتجاجی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے رضوان للہ، حاجی ایصال خان ، نیک عمل خان ، ایم ایم اے کے سابقہ امیدوار محمد آمین ، حمید خان،، مشتاق احمد ایڈوکیت اور دیگر نے خطاب کیا۔ اس موقع پر ایم ایم اے کے رہنماء اور جمیعت علماء اسلام (ف)کے مرکزی جائنٹ سکرٹری سنیٹر صاحبزادہ خالد جان کو مالاکنڈ لیویز نے حراست میں لے لیا مگر مظاہرین کے زبردست مزاحمت کے باعث مالاکنڈ لیویز کو انہیں چھوڑنا پڑا۔ احتجاجی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے مقررین نے کہا کہ جنرل مشرف نے ملک کے عدلیہ، میڈیا ، آئین پر وار کرکے ایمرجنسی کے آڑ میں مارشل لاء لگادیا ہے اور عدلیہ کے ججوں کو ہٹانا ،آئین معطل کرنا ،سیاسی قائدین اور وکلاء وک حراست میں لینے کی سخت الفاظ میںمذمت کرکے جمہوریت کی بحالی تک جنگ لڑنے کا اعلان کیا اور کہا کہ سیاسی ققائیدین گرفتاریوں اور جیلوں سے ڈرنے والے نہیں ۔ مقررین نے مطالبہ کیا کہ ملک میں آئین بحال کرکے ایمرجنسی فوری طور پر ختم کی جائے اور آزادانہ الیکشن کے ذریعے حکومت سیاسی قیادت کے حوالے کی جائے اور جنرل مشرف فوری طور پر اقتدار سے الگ ہوجائیں۔

Share

Leave a Reply