پشاور میں وفاقی کے گھرخودکش حملہ‘ ٤ جاں بحق‘ ٥ زخمی

پشاور۔ پشاور کے علاقے حیات آباد میں مسلم لیگ صوبہ سرحد کے صدر اور وفاقی وزیر برائے سیاسی امور انجینئر امیر مقام کے گھر میں خودکش حملے سے چار افراد جاں بحق اور ان کے بڑے بھائی سابق ایم پی اے پیر محمد خان سمیت پانچ افراد زخمی ہوگئے تاہم امیر مقام محفوظ رہے۔ تفصیلات کے مطابق آج جمعہ کے روز ایک خودکش بمبار حیات آباد کے علاقے میں مسم لیگ صوبہ سرحد کے صدر اور وفاقی وزیر برائے سیاسی امور انجینئر امیر مقام کی رہائش گاہ میں گھس گیا جہاں اس نے سکیورٹی اہلکاروں کے قریب جا کر خود کو دھماکے سے اڑا دیا جس کے نتیجے میں چار افراد جاں بحق اور پانچ زخمی ہوگئے جن میں امیر مقام کے بڑے بھائی اور سابق ایم پی اے پیر محمد خان بھی شامل ہیں زخمیوں کو فوری طور پر قریبی ہسپتال منتقل کردیا گیا جبکہ سرکاری ٹی وی چینل سے گفتگو کے دوران انجینئر امیر مقام نے بتایا کہ وہ حملے کے وقت گھر میں موجود تھے انہوں نے بتایا کہ ان کی سکیورٹی معمول کے مطابق تھی اور کوئی غیر معمولی سکیورٹی نہیں تھی انہوں نے کہا کہ میں نے نقل و حرکت معمول کے مطابق رکھی ہوئی تھی امیر مقام نے بتایا کہ وہ گھر میں اہل خانہ کے ہمراہ موجود تھے کہ اس دوران ایک حملہ آور آیا جس نے وہاں پر موجود سکیورٹی اہلکاروں کے ساتھ خود کو دھماکے سے اڑا دیا۔ امیر مقام نے بتایا کہ دھماکے میں ان کے بڑے بھائی بھی زخمی ہوئے ہیں امیر مقام نے بتایا کہ وہ اور دیگر اہل خانہ محفوط رہے ہیں جبکہ دھماکے کے بعد قانون نافذ کرنے والے اداروں کے اہلکار پہنچ گئے اور انہوں نے جائے وقوعہ کا جائزہ لیا اور تحقیقات شروع کردیں جبکہ نجی ٹی وی چینل کے مطابق خودکش حملہ آور جب رہائش گاہ کے گیٹ پر پہنچا اور دروازہ کھٹکھٹایا تو محافظ نے گیٹ کھولا اور اس سے پوچھ گچھ شروع کردی جس نے خود کو وہاں اڑا دیا جبکہ جاں بحق ہونے والوں میں تین سکیورٹی اہلکار اور ایک شہری شامل ہے جبکہ امیر مقام کے قریبی رشتہ دار نے بتایا کہ رہائش گاہ پر امیر مقام کی ناظمین اور دیگر اہم شخصیات کے ساتھ میٹنگ ہورہی تھی کہ اس دوران حملہ آور نے وہاں آکر خود کو دھماکے سے اڑا دیا۔

Share

Leave a Reply