پولیس نے کئی رہنماؤں سمیت سینکڑوں ارکان گرفتار کرلئے‘ تشدد کا نشانہ بنایا گیا‘ پیپلز پارٹی کا دعویٰ

اسلام آباد ۔ پیپلز پارٹی نے دعویٰ کیا ہے کہ پولیس نے کئی اہم رہنماؤں سمیت سینکڑوں کارکنوں کو گرفتار کرلیا ہے جن میں ڈاکٹر نیلم اعوان‘ ڈاکٹر زبیدہ‘ ڈاکٹر زہرہ افتخار‘ شگفتہ جمالی اور دیگر شامل ہیں۔ تفصیلات کے مطابق آج جمعہ کو پولیس نے سیکٹر ایف ایٹ ٹو میں زرداری ہاؤس کو گھیرے میں لے لیا اور بینظیر بھٹو کو باہر نہیں نکلنے دیاگیا جبکہ بینظیر کی نظر بندی کی خبر سن کر تمام رہنما و جیالے زرداری ہاؤس کے باہر پہنچ گئے جہاں سے پولیس نے انہیں گرفتار کرنا شروع کردیا پیپلز پارٹی کے ذرائع کے مطابق پولیس نے پی پی کی رہنما فریحہ رزاق‘ شگفتہ جمالی‘ ثمینہ خان‘ نسرین چانڈیو‘ مہرین بزنجو‘ علی شنواری‘ ڈاکٹر نیلم اعوان ‘ ڈاکٹر زبیدہ ملک‘ ڈاکٹر زبیرہ افتخار‘ قمر شاہ‘ این رضوی‘ شیخ اظہر‘ سردار ثاقب‘ مقبول حسین‘ ثمینہ خالد‘ یاسمین رحمن‘ فرزانہ رضوی ‘ نشاط ایم پی اے شفقت محمود عباسی ایڈووکیٹ‘ مرتضیٰ ستی سمیت سینکڑوں رہنماؤں و کارکنوں کو تشدد کا نشانہ بنایا اور خواتین اراکین صوبائی و قومی اسمبلی کو مبینہ طور پر بالوں سے پکڑ کر گھسیٹا گیا اور انہیں گاڑیوں میں ڈالا گیا۔ جبکہ پولیس نے پی پی کے وائس چیئرمین یوسف رضا گیلانی کو گرفتار نہیں کیا بلکہ انہیں واپس کردیا گیا۔

Share

Leave a Reply