مسلم لیگ(ق) اور جماعت اسلامی کا ملکی سیاست میں اکٹھے چلنے کا فیصلہ

لاہور میں حافظ سلمان بٹ کی حمایت کی جائیگی
٭۔ ۔ ۔ مہنگائی، بیروزگاری اور لاقانونیت سمیت عوام کو درپیش سنگین مسائل کے حل کیلئے مشترکہ جدوجہد کی جائیگی، منگل کو مسلم لیگ ہاؤس میں مشترکہ اجلاس منعقد ہو گا
٭۔ ۔ ۔ مسلم لیگ کی سیاست کا مقصد قومی مفادات کا تحفظ اور عوام کی خدمت ہے آج کے فیصلے بھی اسی جذبہ سے کیے: کامل علی آغا

لاہور‘ پاکستان مسلم لیگ (ق)اور جماعت اسلامی نے ملک و قوم کے وسیع تر مفاد میں آئندہ قومی ایشوز پر اتفاق رائے سے اکٹھے چلنے کا فیصلہ کیا ہے اور اس سلسلہ میں لاہور سے قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 123 سے مسلم لیگ کے امیدوار میاں طاہر صدیق جماعت اسلامی کے امیدوار حافظ سلمان بٹ کے حق میں دستبردار ہو رہے ہیں۔ یہ فیصلہ یہاں پاکستان مسلم لیگ کے سینئر مرکزی رہنما چودھری پرویزالٰہی کی رہائش گاہ پر دونوں جماعتوں کے رہنماؤں کی ملاقات میں کیا گیا جن میں چودھری پرویزالٰہی، مونس الٰہی، سینیٹر کامل علی آغا، پنجاب اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر چودھری ظہیر الدین، سینئر نائب صدر میاں منیر، لاہور کے صدر یوسف احد ملک، اکرم چودھری اور امیدوار میاں طاہر صدیق اور جماعت اسلامی پاکستان کے سیکرٹری جنرل لیاقت بلوچ، امیر پنجاب ڈاکٹر وسیم، امیر لاہور امیر العظیم، امیدوار حافظ سلمان بٹ، نائب امراء اظہر اقبال اور ظفر جمال بلوچ شامل تھے۔ دونوں جماعتوں کے رہنماؤں نے ملک و قوم کو درپیش مسائل، سیاسی معاملات اور حلقہ این اے 123 کے انتخابات پر تفصیل سے تبادلہ خیال کرتے ہوئے فیصلہ کیا کہ پاکستان و عوام کے مفاد کے پیش نظر آئندہ اہم ایشوز پر مشترکہ لائحہ عمل طے کرنے کی کوشش کی جائے گی اور مہنگائی، بیروزگاری، لاقانونیت جیسے مسائل سے عوام کو نجات دلانے کیلئے مشترکہ جدوجہد کی جائے گی۔ لاہور کے حلقہ این اے 123 میں ہونیوالے ضمنی انتخابات پر این اے 55 راولپنڈی کے الیکشن میں ہونیوالی بدترین دھاندلی کے حوالے سے تفصیلی بات چیت کی گئی۔ اہل لاہور کے وسیع تر مفاد کے پیش نظر مسلم لیگ کی قیادت نے حافظ سلمان بٹ کی سنیارٹی کو سامنے رکھتے ہوئے ان کی بھرپور حمایت اور اپنے امیدوار میاں طاہر صدیق کو ان کے حق میں دستبردار کرنے کا فیصلہ کیا۔ اس سلسلہ میں دونوں جماعتوں کے رہنماؤں نے ایک مشترکہ اجلاس منگل 2 مارچ کو مسلم لیگ ہاؤس میں منعقد ہو گا جس میں مسلم لیگی رہنما، کارکن، بلدیاتی ناظمین اور نائب ناظمین بڑی تعداد میں شریک ہوں گے۔ دریں اثناء پاکستان مسلم لیگ کے مرکزی سیکرٹری اطلاعات کامل علی آغا نے کہا کہ ہماری جماعت پاکستان مسلم لیگ کی سیاست کا مقصد ملک و قوم کے مفادات کا تحفظ اور عوام کی خدمت ہے۔ آج جماعت اسلامی کے رہنماؤں سے ملاقات اور فیصلے بھی اسی جذبہ سے کیے گئے۔ ہماری جماعت نے ملک و قوم اور عوام کی بہتری کیلئے کسی بھی جماعت سے بات چیت یا مشاورت سے کبھی گریز نہیں کیا۔ انہوں نے کہا کہ عوام کو این اے 55 میں کی گئی بدترین دھاندلی کا بہت جلد پتہ چل جائے گا

Share

1 Comment to "مسلم لیگ(ق) اور جماعت اسلامی کا ملکی سیاست میں اکٹھے چلنے کا فیصلہ"

  1. شاہد مسعود احمد's Gravatar شاہد مسعود احمد
    March 1, 2010 - 1:06 am | Permalink

    تو گویم حاجی من گویم حاجی مطلب یہ کہ تو مجھے حاجی کہہ اور میں تمھیں حاجی کہوں گا؟؟؟؟؟دونوں کیا تینوں بلکہ سب مل کر بھی عوامی سوچ کو نہیں بدل سکتے ۔ ۔ ۔ ۔ عوام تو ان ڈرامہ بازوں سے تنگ آچکے ہیں اب تو کوئی انقلاب ہی تبدیلی لا سکتاہے ؟ احمد ندیم قاسمی کہہ گئے کہ:-
    اب تو کوئی انقلاب ھی لائے گا سحر
    آفتاب ابھرا تو بادل چھا گئے
    سیاستدان بھی تو کالے بادل ہیں جو سورج یعنی وسائل سہولتوں کو عوام تک آنے ہی نہیں دیتے ان کے پیٹ تو بھرتے ہی نہیں ہیں یہ سفید ھاتھی تو پاکستان کو تباہ کرگئے کاش کوئی عوامی سوچ والا سیاستدان یا حکمران اجائے۔۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ آمین

Leave a Reply