اسرائیل نے امدادی قافلے پر حملہ امریکہ کی شہ پر کیا۔۔امیر جماعت اسلامی سید منور حسن

مسلم ممالک ان دونوں سے تعلقات پر نظر ثانی اور یرغمالیوں کی رہائی کیلئے اقدامات کریں
٭۔ ۔ ۔ حکومت پاکستانیوں سمیت قافلے میں شامل دیگر افراد کی بازیابی کیلئے کوششیں کریں۔ سید منور حسن
لاہور ‘ امیر جماعت اسلامی پاکستان سید منور حسن نے غزہ کے محصورین کے لیے خوراک اور ادویات لے جانے والے ’فریڈم فلوٹیلا‘ پر اسرائیلی حملے کی شدید مذمت کی ہے اور اسے عالمی ضمیر کے لیے تازیانہ قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ اسرائیل نے ایسا امریکی شہہ پر کیا ہے۔انھوں نے مطالبہ کیا کہ مسلم ممالک امریکہ و اسرائیل کے ساتھ سفارتی تعلقات پر نظرثانی کرتے ہوئے اقوام متحدہ کے ذریعے اسرائیل کے خلاف کارروائی کامطالبہ کریںاور یرغمالیوں کی فوری رہائی کے لیے اقدامات کیے جائیں۔اپنے ایک بیان میں سید منورحسن نے کہا کہ 2007ء سے اسرائیل نے غزہ کا محاصرہ کررکھاہے اور علاقے میں خوراک و ادویات اور دوسرا امدادی سامان نہیں جانے دیا جارہا اور نہ غزہ کے شہریوں کو باہر جانے کی اجازت دی جارہی ہے۔ انھوں نے کہا کہ پندرہ لاکھ بے قصور فلسطینی محصورین کی کوئی حکومت مدد نہیں کررہی، اقوام متحدہ بھی امریکی دباؤ کی وجہ سے خاموش ہے، چالیس مختلف ممالک کے نمائندے جن میں صحافی اور بعض انصاف پسند یہودی بھی شامل ہیں، انسانی ہمدردی کے طور پر ترکی سے خوراک اور ادویات لے کر جارہے تھے جن پر اسرائیلی فوج نے دہشت گردانہ حملہ کرکے درجن سے زائد افراد کو قتل اور 60 کو زخمی کردیا ہے اور باقیوں کو یرغمال بنا لیا گیا ہے۔ انھوں نے کہا کہ یہ کھلی دہشت گردی ہے، اور دہشت گردی کے خلاف ڈھنڈورا پیٹنے والوں کی خاموشی سے ان کا دوہرا معیار ظاہر ہوتاہے۔سید منورحسن نے کہا کہ اسرائیل دنیا کا سب سے بڑا دہشت گردہے جس نے نصف صدی سے فلسطینیوں کا قتل عام شروع کررکھا ہے اور اسے مکمل امریکی سرپرستی حاصل ہے۔ انھوں نے کہا کہ اسرائیلی فوج کی حالیہ کارروائی پوری انسانیت کے خلاف کارروائی ہے، پوری دنیا کو اس کی شدید مذمت کرنی چاہیے اور اسرائیل سے احتجاج کرنا چاہیے۔ سید منورحسن نے قافلے میں شامل طلعت حسین سمیت پاکستانی صحافیوں کی سلامتی اور بخیریت واپسی کی دعا کی ہے۔

Share

Leave a Reply