چیف جسٹس آف پاکستان نے ایساف کنٹینرز سے سامان غائب کیے جانے کے سیکنڈل کا از خود نوٹس لے لیا

اسلام آباد ‘ چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری نے انٹرنیشنل سیکورٹی فورس ان افغانستان (ایساف) کنٹینرز سے سامان غائب کیے جانے کے سیکنڈل کا از خود نوٹس لیتے ہوئے ڈی جی ایف آئی اے اور چیئر مین ایف بی آر سے 5 جولائی تک رپورٹس طلب کر لیں ۔ عدالت عظمیٰ کی طرف سے جاری بیان کے مطابق چیف جسٹس نے یہ نوٹس پاکستان مسلم لیگ (ق) کے سیکرٹری جنرل مشاہد حسین سید کی طرف سے ایک مقامی اخبار میں کی گئی اپیل پر لیا ہے جس میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ ملکی تاریخ کا سب سے بڑا غبن ہوا ہے جس سے 220 ارب روپے کا نقصان ہوا ہے لہذا سپریم کورٹ اس کا از خود نوٹس لے جس پر چیف جسٹس نے کسٹم سکینڈل کیس کا از خود نوٹس لے لیا ہے اور ڈی جی ایف آئی اے اور چیئرمین ایف بی آر کو 5 جولائی کو رپورٹ طلب کر لی ہے اس رپورٹ کے بعد تحقیقات کاباقاعدہ آغاز کیا جائے گا اور کسٹم حکام اور دیگر ملوث افراد کو طلب کر کے انکوائری مکمل کی جائے گی ۔ یاد رہے 220 ارب روپے مالیت کا سامان افغانستان بھیجوایا جانا تھا مگر وہاں بھیجوانے کی بجائے کنٹینر ز پاکستان میں غائب کر دیئے گئے جس سے ایف بی آر کو 220 ارب روپے کا نقصان ہوا اخباروں میں بھی ایساف کے 11 ہزار 727 کنٹینروں کے غائب ہونے کی خبر شائع ہوئی تھی

Share

Leave a Reply