ٹیسٹ ٹیوب نظام تولید میں پرانے بیضے سے بھی استفادہ ممکن ہو چکا ہے

نیویارک ۔ 26 جولائی(اے پی پی ، نیوز اردو ڈاٹ نیٹ)طب کی دنیا میں اب ٹیسٹ ٹیوب بی بی کی پیدائش کیلئے عورت کے تازہ ’’ ایگ‘‘ کی بجائے لیبارٹری میں محفوظ کئے گئے پرانے بیضہ سے بھی استفادہ ممکن ہو گیا ہے۔ ان وائیٹرو فرٹیلائزیشن ( آئی وی ایف) ٹیکنالوجی میں مزید ترقی کے بعد نظام تولید کی مزید باریکیوں اورمشکلات کو دور کرنے کے بعد اب کسی دوسری عورت کے ایگ کو پہلی عورت کے بطن میں رکھ کر پیدائش کے عمل کو ممکن بنایا جا سکے گا۔ ہیومن ری پروڈکشن‘‘ نامی جریدے میں شائع ہونے والی اس رپورٹ میں مزید بتایا گیا ہے کہ ان تجربات میں کامیابی کی شرح تازہ ایگ کے برابر رہی ہے۔ اس تحقیق کے بعد دنیا بھر میں بے اولاد جوڑوں کے ہاں بچے پیدا ہونے کی امید 85 فیصد تک اضافہ ہو چکا ہے۔ نیویارک یونیورسٹی فرٹیلائزیشن سنٹر کے پروفیسر نیکولس نوباز کے مطابق اب تولید کے میدان میں مزید جدت اور اعتماد کے ساتھ آگے بڑھایا جا سکتا ہے۔

Share

Leave a Reply