خیبر پختونخوا : بارش و سیلاب ،جاں بحق افراد کی تعداد108ہوگئی

پشاور ‘ آج ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق خیبر پختونخوا میں بارش اور ندی نالوں میں طغیانی نے تباہی مچادی۔ سوات اور شانگلہ میں بارش اور سیلاب کے باعث چون افراد جا ں بحق ہوگئے ،صوبے میں ہلاکتوں کی تعداد ایک سو آٹھ ہوگئی ۔ لوئر دیر کے علاقہ چکدرہ میں آبی ریلے کے با عث ایک سو دو افراد سرکاری ریسٹ ہاوس میں پھنس گئے۔ سوات اور شانگلہ میں سیلاب نے تباہی مچادی،مجموعی طور پر چون افراد کے جاں بحق ہونے کی اطلاعات موصول ہوئی ہیں ۔ جس میں بچے اور خواتین بھی شامل ہیں ۔سوات میں آبی ریلے میں بہہ کر بچے سمیت چار افراد جاں بحق ہوگئے۔ شانگلہ کے علاقے داموڑئی، شاہ پور خوڑ اور ڈھیرئی میں مختلف حادثات کے دوران خاتون سمیت سترہ افراد ہلاک اور دو لاپتہ ہوگئے جبکہ سوات اور شانگلہ میں ہی بارش اور سیلاب کے باعث مختلف مقامات پر چوبیس افراد جاں بحق ہوگئے۔دیر لوئر میں رابطہ پل متاثر ہونے سے تیمر گرہ پشاور روڈ بند ہوگیا۔ تیمر گرہ بازار میں برساتی نالے میں طغیانی کے باعث پانی دکانوں میں داخل ہوگیا۔ دیر بالا میں بچی سمیت تین افراد ڈوب کر کر ہلاک ہوگئے۔ پن چکی، درجن سے زائد مویشی اور ٹیوب ویل سیلاب میں بہہ گئے۔ تخت بھائی میں مدرسے کی چھت گرنے سے ایک طالب علم جاں بحق اور دس زخمی ہوگئے۔مانسہرہ میں لینڈ سلائڈنگ سے شاہراہ قراقرام بند ہوگئی۔ داسو میں دو افراد ہلاک ہوگئے۔ کوہستان کا ملک کے دیگر حصوں سے زمینی رابطہ منقطع ہوگیا۔ ٹانک میں متعدد مکانات منہدم اور پانی گھروں میں داخل ہوگیا۔ لکی مروت میں دریاوٴں میں طغیانی سے کئی دیہات زیر آب آگئے۔ زیر تعمیر پل تعمیراتی سامان سمیت بہہ گیا۔ادھر دریائے گمبیلا سے ایک شخص کی لاش ملی ہے۔ ڈیرہ اسماعیل خان میں مکان کی چھت گرنے سے ایک بچی جاں بحق اور دو افراد زخمی ہوگئے۔ آبی ریلے میں دو افراد ڈوب کر ہلاک ہوگئے، شدید بارش کے باعث دریائے سندھ کے کنارے آباد متعدد دیہات زیر آب آگئے۔جنوبی وزیرستان میں آسمانی بجلی گرنے سے دو سیکورٹی اہلکار جاں بحق اور دو زخمی ہوگئے۔ کرک میں چھت گرنے سے دو بچے ہلاک ہوگئے۔ خدہ بانڈہ میں سیلاب میں بہہ کر طالب علم ہلاک ہوگیا۔ پشاور میں ناصر باغ، متھرا، ورسک، شاہی بالا اور تاج آباد میں سیلاب آگیا۔ قادر آباد میں مکان کی چھت منہدم ہونے سے تین اور بڈھ بیر میں چار افراد جاں بحق ہوگئے۔ دریائے خیالی میں اونچے درجے کے سیلاب کے باعث بڑے نقصان کا خدشہ ہے۔دوسری جانب گلگت بلتستان میں استور کے مقام پر دریائے بڑے پانی کے پل کا رسہ ٹوٹ گیا جس سے دو افراد ڈوب گئے۔ پل ٹوٹنے سے استور اور اسکردو کے درمیان ٹریفک معطل ہوگیا ہے۔بنوں اور کوہاٹ میں موسلادھار بارش اور آبی ریلوں سے متعدد علاقے زیر آب آگئے۔بنوں میں تیز بارش کے باعث تھانہ غوریوالہ، تھانہ ہوید اور تھانہ میریان کی حدود میں بیشتر علاقے زیر آب آگئے۔ گاوٴں بھرت مچن خیل اور شمشی خیل میں پچیس سے زائد گھر تباہ ہوگئے۔ درجنوں مال مویشی پانی میں بہہ گئے۔ گورنمنٹ ہائی اسکول مچن خیل میں امدادی کیمپ قائم کردیا گیا ہے جہاں متاثرین کو غذائی اشیاء فراہم کی جارہی ہیں۔ دریائے کرم میں طغیانی سے آٹھ کروڑ روپے سے تعمیر شدہ پل کا ایک حصہ پانی میں بہہ گیا جس کے بعد پل کو ٹریفک کے لیے بند کردیا گیا۔ کوہاٹ میں گزشتہ چوبیس گھنٹوں سے جاری بارش کے باعث مختلف علاقے زیر آب آگئے۔ جرما، ذرہ خیلہ، ہمیش گل بانڈہ ، چیچنہ،حافظ آباد ، سورگل اور مسلم آباد میں درجن سے زائد مکانات سیلاب کے باعث منہدم ہوگئے۔ آبی ریلے سے کھڑی فصلیں تباہ ہوگئیں۔کمشنر کوہاٹ کی ہدایت پر تمام سرکاری اسکولوں میں متاثرین کے لیے ریلیف کیمپس قائم کردیے گئے۔ پاک فوج کے جوان سیلاب میں پھنسے لوگوں کو محفوظ مقامات پر منتقل کررہے ہیں۔دوسری جانب گلگت بلتستان میں استور کے مقام پر دریائے بڑے پانی کے پل کا رسہ ٹوٹ گیا جس سے دو افراد ڈوب گئے۔ پل ٹوٹنے سے استور اور اسکردو کے درمیان ٹریفک معطل ہوگیا ہے۔

Share

2 Comments to "خیبر پختونخوا : بارش و سیلاب ،جاں بحق افراد کی تعداد108ہوگئی"

  1. زاھید ھان's Gravatar زاھید ھان
    August 1, 2010 - 7:26 am | Permalink

    hy pary dosto aj hamer suba sarhad n.w,f.p.ma jo seleb ay ha ye hamer oper allah ka bhot bhara emtehan ha seb log all ka shuker ada karo ammn

  2. زاھید ھان's Gravatar زاھید ھان
    August 1, 2010 - 7:30 am | Permalink

    suba sarhad ham logo ko panjb our mahajer pakistane nh samejt ha is waqt pore pakistan par allh ka seb se bhara azeb ha zardaree kuda is katm kare ammn .

Leave a Reply