Urdu News

Urdu News…The 3rd Largest Online Urdu Newspaper

Urdu News header image 4

Entries Tagged as 'asif zardari'

گول میز کانفرنس کے حوالے سے سیاستدانوں کا جواب مثبت ہے ، آصف علی زرداری

February 10th, 2011 · No Comments · پاکستان

قومی مشاورت کے ذریعے ملک کو درپیش بحرانوں سے نکال لیا جائے گا
صدر اور وزیر اعظم کی ملاقات میں عزم
وزیر اعظم نے صدر کو باضابطہ طور پر وفاقی کابینہ کے مستعفی ہونے کے بارے میں آگاہ کیا
اسلام آباد ‘ صدر وزیر اعظم نے عزم کیا ہے کہ وسیع تر قومی مشاورت کے ذریعے ملک کو درپیش بحرانوں سے نکال لیا جائے گا ۔ ہر موقع پر سیاسی و جمہوری قوتوں نے قومی ایشوز کے حل کے حوالے سے زبردست ہم آہنگی کا مظاہرہ کیا ہے ۔ اب بھی سیاستدانوں کے ان ہی مثبت اور جمہوری رویوں کی توقع ہے ۔ وزیر اعظم سید یوسف رضاگیلانی نے جمعرات کو اسلام آباد میں صدر آصف علی زرداری سے ملاقات کی ۔ ملک کی سیاسی صورتحال ، نئی کابینہ کی تشکیل ، مجوزہ گول میز کانفرنس سمیت دیگر اہم امور پر تبادلہ خیال کیا گیا ذرائع کے مطابق وزیر اعظم نے صدر کو باضابطہ طور پر آگاہ کیا کہ کابینہ کے تمام وزراء رضاکارانہ طور پر مستعفی ہو گئے ہیں ۔کابینہ کی تحلیل سے متعلق پارٹی کی مرکزی مجلس عاملہ کے فیصلے کی مکمل پاسداری کی گئی ہے ۔ اس فیصلے کے حوالے سے کابینہ کے اجلاس کی طلبی سے قبل اتحادی جماعتوں کو بھی اعتماد میں لیا گیا تھا ۔ وزیر اعظم نے ان رابطوں کے حوالے سے بھی صدر کو آگاہ کیا ۔ ذرائع کے مطابق صدر نے گول میز کانفرنس کے حوالے سے سیاسی قائدین سے رابطوں کے بارے میں وزیر اعظم کو آگاہ کیا ۔ صدر نے وزیر اعظم کو بتایا کہ وہ کانفرنس کے انعقاد کے سلسلے میں بیشتر سیاستدانوں سے رابطے کر چکے ہیں ۔ سیاسی قوتوں کی جانب سے مثبت جواب ملا ہے ۔ ذرائع نے بتایا کہ نئی کابینہ کی تشکیل کے حوالے سے وزراء کے ناموں پر بھی مشاورت ہوئی ۔

Tags:

صدر آصف علی زرداری کی طرف سے اپنی شادی کے بارے خبروں کی تردید

February 4th, 2011 · 1 Comment · پاکستان

اسلام آباد‘ صدر آصف علی زرداری اور پاکستان پیپلز پارٹی کے شریک چیئر مین آصف علی زرداری نے جمعہ کو پارٹی کی مرکزی مجلس عاملہ کے اجلاس سے خطاب کے دوران اپنی دوسری شادی کے بارے میں خبروں کی تردید کی ہے۔آصف علی زرداری نے کہا ہے کہ وہ بے نظیر بھٹو کی شہادت کے بعد ان کے مشن سے شادی کر چکے ہیں۔پریس کانفرنس کے دوران جہانگیر بدر نے تصدیق کی کہ آصف علی زرداری کے اپنی شادی کے بارے خبروں کی سختی سے تردید کی ہے۔

Tags: ·

برمنگھم ‘ تقریر کے دوران بابا جی نے صدر زرداری طرف جوتے پھینک دئے

August 7th, 2010 · 9 Comments · بریکنگ نیوز, پاکستان

برمنگھم ‘ برمنگھم میں پیپلزپارٹی کے جلسے کے دوران ایک سفید کپڑے اور سندھی اجرک پہنے ہوئے ادھیڑ عمر شخص نے صدر زرداری کی طرف جوتے پھینک دئے۔اطلاعات کے مطابق یہ ادھیڑ عمر شخص تقریب کے دوران پہلی قطار میں موجود تھا۔ اور صدر زارداری کارکنوں سے خطاب کے لئے ہال میں موجود تھے۔زرائع کا کہنا ہے کہ جلسے کے دوران کارکنوں نے ‘‘ گو زرداری گو ‘‘ کے زبردست نعرے بھی لگائے اور کارکنوں کی جانب سے زبردست ہلڑ بازی اور گالی گلوچ بھی دیکھنے میں آئی ۔اور کئی کارکن ‘‘ گو زرداری گو ‘‘ کے نعرے لگاتے ہوئے تقریب چھوڑ کر چلے گئے۔آخری اطلاع آنے تک صدر زرداری تقریر ادھوری چھوڑ کر چلے گئے

Tags:

حکومت صحافیوں کو پیشہ ورانہ فرائض کی ادائیگی میں ہر ممکن معاونت جاری رکھے گی۔ صدر مملکت آصف علی زرداری

July 23rd, 2010 · No Comments · پاکستان

کراچی ۔ 23 جولائی(اے پی پی ، نیوز اردو ڈاٹ نیٹ) صدر مملکت آصف علی زرداری سے سکھر، لاڑکانہ اور حیدرآباد پریس کلب کے عہدیداروں نے جمعہ کو یہاں وزیر اعلیٰ ہاؤس کراچی میں ظہرانے پر ملاقات کی۔ اس موقع پر وزیر اعلیٰ سندھ سید قائم علی شاہ، وزیر مملکت برائے اطلاعات سید صمصام بخاری، وفاقی وزیر پیٹرولیم و قدرتی وسائل سید نوید قمر، مشیر اطلاعات سندھ جمیل احمد سومرو، پاکستان پیپلز پارٹی کی سیکریٹری اطلاعات فوزیہ وہاب، صوبائی وزیر قانون محمد ایاز سومرو، وزیر اعلیٰ سندھ کے معاون خصوصی وقار مہدی اور بلاول ہاؤس کے ترجمان اعجاز درانی بھی موجود تھے۔ ملاقات کے دوران صحافیوں کو درپیش مسائل اور دیگر امور پر بھی گفتگو ہوئی۔ صدر مملکت نے صحافیوں کو یقین دلایا کہ حکومت صحافیوں کو پیشہ ورانہ فرائض کی ادائیگی میں ہر ممکن معاونت جاری رکھے گی۔

Tags: ·

ممبئی حملوں کے ملزمان نئی دہلی کے حوالے نہیں کئے جائیں گے ‘ صدر زرداری

July 11th, 2010 · No Comments · پاکستان

پاکستان اور بھارت کے درمیان تحویل مجرمان کا معاہدہ نہیں
پاک بھارت مفاہمت میں رخنہ ڈالنے والے ’’ غیر ریاستی عناصر ‘‘ کو انصاف کے کٹہرے میں لاکھڑا کیا جائے گا
سیاسی بحران پر قابو پا لیا جائے گا ‘ حکومت اپنی مدمت پوری کرے گی
اتحادی جماعتوں کے درمیان اختلاف رائے ہے لیکن حکومت اپنے اتحادیوں کے ساتھ خوش ہے ‘ صدر مملکت کا چینی ٹی وی اور اخبارات کو انٹرویو

بیجنگ ‘ صدر آصف علی زرداری نے کہا ہے کہ ممبئی حملوں کے ملزمان کو بھارت کے حوالے نہیں کیا جائے گا کیونکہ دونوں ملکوں کے درمیان تحویل مجرمان کا معاہدہ نہیں تاہم پاک بھارت مفاہمت میں رخنہ ڈالنے والے غیر ریاستی عناصر کو انصاف کے کٹہرے میں لایا جائے گا ۔ حکومت اپنی مدت پوری کرے گی اور سیاسی بحران پر قابو پا لیا جائے گا ۔ چینی ٹی وی اور اخبارات کو انٹرویو میں صدر زرداری نے کہا کہ دہشت گردی عالمی مسئلہ ہے اور ایک طاقتور ملک بھی اپنا صدر کا دفاع نہیں کر سکتا ۔ انہوں نے کہا کہ شدت پسندی اور دہشت گردی نے پوری دنیا کو یرغمال بنا رکھا ہے اور اس سے نمٹنے کے لئے دنیا کے ساتھ تعاون کیا جا رہا ہے ۔ صدر زرداری کا کہنا تھا کہ بھارت کے ساتھ اچھے تعلقات چاہتے ہیں ۔ پاکستان اور بھارت کے درمیان جاری امن کی کوششوں کو پٹڑی سے اتارنے میں ممبئی کے حملوں آوروں کو کامیابی ملی ۔ ممبئی حملوں کے بعد پاکستان اور بھارت کے درمیان مذاکرات التواء کا شکار ہوئے مگر اب بحالی کی طرف بڑھ رہے ہیں اور امید ہے کہ بھارت کی سنجیدہ جمہوری حکومت مذاکراتی سلسلے کو آگے برھانے میں دور اندیشی کا مظاہرہ کرے گی ۔ صدر زرداری نے کہا کہ جس وقت ممبئی حملے ہوئے اس وقت مفاہمت کے ایک معاہدے پر دستخط کے سلسلے میں پاکستانی وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نئی دہلی میں تھے امید ہے کہ دونوں ملک مفاہمت کے سلسلے میں پیش رفت کریں گے ۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ پاکستان میں جمہوریت کو کئی مرتبہ پٹڑی سے اتارنے کی کوشش کی گئی اس کے باعث ملک میں جمہوری نظام مستحکم نہیں ہوا تاہم موجودہ حکومت اپنی 5 سالہ مدت پوری کرے گی ۔ اور سیاسی بحران پر قابو پا لیا جائے گا ۔ اتحادی جماعتوں کے درمیان اختلاف رائے ہے لیکن حکومت اپنے اتحادیوں کے ساتھ خوش ہے ۔انہوں نے پاک چین ریلوے روابط کو فروغ دینے کے لئے تعاون کو مضبوط بنانے کے عزم کا اظہار کیا اور کہا کہ انہیں یقین ہے کہ ریلوے روابط سے بھرپور فائدہ اٹھایا جا سکتا ہے ۔ چین ریلوے کے شعبے میں کافی آگے ہے اور دونوں ملک مل کر ترقی کر سکتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ بھارت کے ساتھ تحویل مجرمان کا معاہدہ نہیں ہے جبکہ ایسے معاملات میں اس طرح کا باہمی معاہدہ کا ہونا ضروری ہے ۔ ممبئی حملوں میں ملوث مجرمان کا ٹرائل پاکستان میں ہی ہو رہا ہے اور مجرمان کو انصاف کے کٹہرے میں لایا جائے گا

Tags: ·

لاہور ہائی کورٹ نے آصف علی زرداری کے والد حاکم علی زرداری کیخلاف نیب مقدمات ری اوپن کرنے کی اجازت دے دی

June 22nd, 2010 · No Comments · پاکستان

این آر او ختم ہونے کے بعد تمام مقدمات بحال ہو گئے، حاکم زرداری اور ہاشم بابر کیخلاف ریفرنس ری اوپن کئے جائیں، نیب کی استدعا
لاہور‘ لاہور ہائی کورٹ نے صدر آصف علی زرداری کے والد حاکم علی زرداری کے خلاف نیب مقدمات ری اوپن کرنے کی اجازت دے دی ۔ لاہور ہائی کورٹ میں قومی احتساب بیورو پنجاب نے درخواست دائر کی تھی جس میں عدالت سے استدعا کی گئی تھی کہ این آر او ختم ہونے کے بعد تمام مقدمات بحال ہوگئے ہیں اس لئے صدر آصف علی زرداری کے والد حاکم علی زرداری اور ہاشم بابر کے خلاف ریفرنس ری اوپن کرنے کی اجازت دی جائے ۔ چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ خواجہ محمد شریف نے احتساب ریفرنس ری اوپن کرنے کی اجازت دے دی ہے ۔ واضح رہے کہ حاکم علی زرداری پر الزام ہے کہ انہوں نے بے نظیر بھٹو کے دور حکومت میں ڈائریکٹر ملٹری لینڈ ہاشم بابر کے ساتھ مل کر راولپنڈی میں پاک فوج کی زمین فروخت کی تھی

Tags: ···

صدر زرداری کے 2 عہدوں کے خلاف وفاق اور صدر کے وکلاء نے مقدمہ کی پیروی کابائیکاٹ کردیا

June 21st, 2010 · No Comments · پاکستان

عدالت عالیہ نے اٹارنی جنرل کو 8 جولائی کیلئے نوٹس جاری کردیا
٭۔ ۔ ۔ درخواست قابل سماعت نہیں ہے لیکن فل بنچ ہمارا موقف سننے کیلئے تیار نہیںاس لئے صدر کی ہدایت پر مقدمہ کی پیروی سے الگ ہوگئے: خالد رضوی ایڈووکیٹ

لاہور‘ صدر آصف علی زرداری کی ہدایت پر وفاق اور ان کے وکلاء نے صدر کے 2 عہدوں کے خلاف درخواست کو ناقابل سماعت قرار دینے سے متعلق درخواستوں کو مسترد کئے جانے پر مقدمہ کی پیروی کا بائیکاٹ کردیا۔ تفصیلات کے مطابق صدر آصف علی زرداری کے 2 عہدوں کے خلاف درخواست اے کے ڈوگر ایڈووکیٹ کے توسط سے وکلاء الائنز نے دائر کی تھی۔ آج عدالت عالیہ کے پانچ رکنی فل بنچ نے جسٹس اعجاز چودھری کی سربراہی میں سماعت شروع کی تو صدر آصف علی زرداری کے وکلاء خالد رضوی‘ سیف الملوک اور رمضان چودھری وغیرہ نے موقف اختیار کیا کہ پہلے اس بات کا فیصلہ کیا جائے کہ صدر کے خلاف 2 عہدے رکھنے سے متعلق درخواست قابل سماعت بھی ہے یا نہیں۔ وکلاء کا موقف تھا کہ درخواست قابل سماعت نہیں ہے اس لئے اس پر بحث کی جائے اور انہیں تیاری کیلئے وقت دیا جائے۔ تاہم عدالت عالیہ نے صدر مملکت کے وکلاء سے اتفاق نہ کرتے ہوئے درخواستیں مسترد کردیں اور اے کے ڈوگر ایڈووکیٹ کو بحث کیلئے کہا۔ صدر کے وکلاء نے خالد رضوی کی قیادت میں مقدمہ کا بائیکاٹ کردیااور کہا کہ فیصلہ چاہے کچھ بھی آئے وہ آئندہ اس کیس میں فل بنچ کے سامنے پیش نہیں ہونگے جس پر عدالت عالیہ نے اٹارنی جنرل آف پاکستان کو 8 جولائی کیلئے نوٹس جاری کردیا۔ بعدازاں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے صدر کے وکیل خالد رضوی نے کہا کہ صدر کے 2 عہدوں کے خلاف درخواست قابل سماعت نہیں ہے لیکن عدالت ان کا موقف سننے یا بحث کا موقع دینے کیلئے تیار نہیں ہے اس لئے اپنے موکل کی ہدایت پر اب وہ آئندہ فل بنچ کے سامنے پیش نہیں ہونگے۔

Tags: ··

مذہب کے نام پر تعصب پھیلانے والوں اور لوٹ مار کرنے والوں کو اپنی قسمت پر اثرانداز نہیں ہونے دیں گے ۔صدرآصف علی زرداری

June 20th, 2010 · No Comments · پاکستان

کارکنان بے نظیر بھٹو کی سالگرہ کے موقع پر دہشت گردی کے خلاف جنگ میں زخمی ہونے والوں کے لیے خون کے عطیات دیں
پوری قوم بے نظیر بھٹو شہید کے مشن کی محافظ بن چکی ہے
ظالم و جابر عناصر ان کے مشن کو ختم کرنے میں نا کام ہو چکے ہیں۔ ۔ ۔ سید یوسف رضا گیلانی
بے نظیر بھٹو شہید کی 57ویں سالگرہ کے موقع پر صدر وزیراعظم کے پیغامات

اسلام آباد ‘ صدر آصف علی زرداری نے کہا ہے کہ مذہب کے نام پر تعصب پھیلانے والوں لوٹ مار کرنے والوں کو اپنی قسمت پر اثرانداز نہیں ہونے دیں گے ۔ کارکنان بے نظیر بھٹو کی سالگرہ کے موقع پر دہشت گردی کے خلاف جنگ میں زخمی ہونے والوں کے لیے خون کے عطیات دیں۔وزیر اعظم سید یوسف رضا گیلانی کا کہنا ہے کہ پوری قوم بے نظیر بھٹو شہید کے مشن کی محافظ بن چکی ہے ۔ ظالم و جابر عناصر ان کے مشن کو ختم کرنے میں نا کام ہو چکے ہیں ۔ان خیالات کا اظہار صدر مملکت اور وزیر اعظم نے بے نظیر بھٹو شہید کی 57 ویں سالگرہ کے موقع پر اپنے پیغامات میں کیا ہے ۔ صدر آصف علی زرداری نے کہا ہے کہ آج شہید بے نظیر بھٹو کے 57 ویں یوم پیدائش کے موقع پر میں پیپلز پارٹی کے کارکنان سے ان قدروں پر کار بند رہنے کا اعادہ کرنے کے لیے کہتا ہوں جن پر وہ ہمیشہ نہ صرف خود قائم رہیں بلکہ ان کی خاطر وہ لڑتی بھی رہیں اور وقت آنے پر ان ہی قدروں کی خاطر انھوں نے جان دے دی ۔انھوں نے بڑی جرات سے عسکریت پسندوں اور انتہاء پسندوں کا مقابلہ کیا جو وحشیانہ طاقت کے بل بوتے پر عوام پر اپنا نظریاتی ایجنڈہ مسلط کرنا چاہتے تھے جیسا کہ شہید بی بی نے اس جنگ میں اپنے خون کا نذرانہ دیا میں پارٹی کارکنان سے کہتا ہوں کہ وہ آج کے دن کے مسلح افواج کے ان سپاہیوں ، پولیس اور قانون نافذ کرنے والے دیگر اداروں کے ان اراکین اور عام شہریوں کے لیے خون کے عطیات دیں جنہوں نے پاکستان کو ایک اعتدال پسند اور مختلف نظریات کے حامل لوگوں کو سمانے والا ایسا ملک بنانے کے لیے اپنا خون نچھاور کیا جہاں عوام کی پسند کا تعین بیلٹ پیپر سے ہو گا ناکہ گولی سے ۔ا ن کے یوم پیدائش کے موقع پر آئین ان کی نصیحت کو یاد کریں جو انھوں نے اپنی شہادت سے چند روز قبل ہی عوام کو کی تھی ’’برائے مہربانی انتہاء پسندی، آمریت ،غربت اور جہالت کے خلاف اپنی جنگ جاری رکھیں‘‘ ۔ یہ صرف نعرہ ہی نہیں تھا بلکہ وہ اس پر خود بھی عمل پیرا تھیں اور اس کے خلاف جنگ کی آگے بڑھ کر قیادت کر رہی تھیں۔ شہید کی زندگی کی یادیں تازہ کرتے ہوئے اعلان کریں کہ مذہب کے نام پر نہ تو ہم متعصب اور لوٹ مار کرنے والوں کو اپنی قسمت پر اثر انداز ہونے دیں گے اور نہ ہی عسکریت پسندوں اور انتہاء پسندوں کو اپنا ملک اور اپنا طرز زندگی تباہ کرنے کی اجازت دیں گے ۔ دو خواب جو بی بی کو بہت عزیز تھے ’’کثیر جماعتی جمہوریت اور معاشرے کے پسماندہ اور صبر و استعداد کا شکار لوگوں کی گلو خاصی ،آزادی ‘‘ میں اس موقع پر پھر اعادہ کرتا ہوں کہ پی پی پی کے تصور کے عین مطابق جمہوریت کو مضبوط کرنے اور پسماندہ لوگوں کی ترقی کے لیے اپنی کوشش جاری رکھے گی۔ اس حوالے سے کسی شک و شبے اور غلطی کی کوئی گنجائش نہیں۔پیپلز پارٹی اپنے بانی چیئر مین اور ملک کے پہلے منتخب وزیر اعظم کے عدالتی قتل، اس کی دوسری چیئر پرسن بے نظیر بھٹو کی جلا وطنی اور بعد ازاں قتل اور اس کے رہنماؤں اور کارکنوں پر الزامات کی بوچھاڑ اور ایذارسانیوں کے باوجود قائم و دائم رہی ۔ یہ اسی طرح مشکلات کا مقابلہ کرتی رہے گی اور مضبوط سے مضبوط ہوتی رہے گی ہم اپنی پارٹی کے خلاف سازشوں یا رکاوٹیں کھڑی کرنے سے روکنے والے نہیں ہیں۔ اس موقع پر تمام شہداء کو بھی یاد کریں۔مسلح افواج کے ہمارے ان بہادر جوانوں اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کے اراکین نے اپنی جانوں کا نذرانہ دیا تاکہ قوم کسی خوف کے بغیر اور آزادی سے زندگی گزار سکے ۔ جمہوریت کے شہیدوں نے اسیری، جلا وطنی ، تشدد اور پھانسیوں کا سامنا کیا ۔ آج کے دن ہم ان سب کو سلام پیش کرتے ہیں جبکہ وزیر اعظم سید یوسف رضا گیلانی نے اپنے پیغام میں کہا ہے کہ بے نظیر بھٹو مسلم دنیا کی پہلی خاتون وزیر اعظم تھیں ہم انہیں خراج تحسین پیش کرتے ہیں۔ بے نظیر بھٹو شہید نے بحالی جمہوریت ، ملک میں قیام امن، عدلیہ کی آزادی ، پارلیمنٹ کی خود مختاری ، انسانی حقوق اور عوام الناس کی معاشی فلاح و بہبود کے لیے عظیم قربانی دی۔ وہ عوام کے حقوق کی زبردست حامی اور جمہوریت کی علمبردار تھیں۔ زندگی بھر انھوں نے نا انصافیوں ، ظلم و جبر اور تعصبات کے خلاف بڑی جرات و بہادری سے جدوجہد جاری رکھی۔ انہیں بہت سی مشکلات اور نا خوشگوار حادثوں کا سامنا کرنا پڑا مگر اپنے منتخب کردہ راستے پر چلتے ہوئے ان کے پائے استقلال میں ذرا بھی لغزش نہیں آئی اور انھوں نے آمروں کو ایوان اقتدار سے نکالنے اور مایوسی و نا امیدی کی حامی اور ترقی مخالف قوتوں کے مذموم عزائم کو نا کام بنانے کے لیے مرتے دم تک اپنی جدوجہد جاری رکھی ۔ بے نظیر بھٹو شہید عوام کی حقیقی لیڈر تھیں اور انھوں نے عوام کے درمیان رہ کر ہی جام شہادت نوش کیا ۔ انہیں انتباہ کیا گیا تھا کہ وہ پاکستان نہ جائیں مگر انھوں نے کہا کہ چونکہ عوام کو ان کی ضرورت ہے لہذا وہ کیسے عوام سے دور رہ سکتی ہیں۔ 2007ء میں کراچی میں پاکستان آمد کے فوراً بعد جبکہ وہ ایک بہت بڑی عوامی ریلی کی قیادت کر رہی تھیں سازشیوں نے ان کی جان لینے کی کوشش کی جس میں ان کے بہت سے حامی کارکن شہید ہو گئے ۔ وہ قطعاً مرعوب نہیں ہوئیں اور نہ ہی دباؤ میں آئیں اور فوراً ہسپتالوں کا دورہ کر کے زخمیوں کے حوصلے بڑھائے اور غمزدہ خاندانوں کے غم میں شریک ہونے کے لیے ان کے گھروں میں گئیں۔ انتہائی مشکل صورتحال اور اپنی زندگی کو لاحق خطرات کے باوجود انھوں نے جمہوریت کی بحالی اور ملک میں قانون کی حکمرانی قائم کرنے کے لیے اپنا مشن جاری رکھا۔ سازشی عناصر اور تاریکی کی قوتیں روشنی کے اس مینار کو عین عوام کے درمیان اس وقت بجھانے میں کامیاب ہو گئیں جب وہ راولپنڈی میں بڑے عوامی اجتماع سے خطاب کے بعد جلسہ گاہ سے باہر نکل رہی تھیں تاہم یہ ظالم و جابر لوگ ان کے مشن کو ختم کرنے میں نا کام رہے کیونکہ اب پوری قوم اس مشن کی محافظ بن گئی ہے ۔ا پنے باپ کی شہادت کی طرح ان کی عظیم قربانی نے عوام کے جمہوریت پر یقین کر مزید پختہ کر دیا ہے اور ملک میں جمہوری دور کا آغاز ہو چکا ہے ۔ اس موقع پر میں ہر شہری سے بالعموم اور پاکستان پیپلز پارٹی کے کارکنان سے بالخصوص اپیل کرتا ہوں کہ وہ آج کے دن عہد کریں کہ وہ جمہوری ، پر امن اور خوشحال پاکستان کی خواہش میں کبھی بھی نہیں ڈگمگائیں گے۔ شہید بے نظیر بھٹو کی پارٹی اپنی مخلوط حکومت کے ساتھیوں کے ساتھ مل کر ان کے ویژن کو حقیقت میں ڈھالے گی ۔ پاکستان کے بہادر عوام کی مدد اور تعاون سے ہم موجودہ بحرانوں پر قابو پا لیں گے ۔انشاء اﷲ خدا تعالیٰ ہماری کاوشوں میں ہمارا حامی و ناصر ہو۔(امین)

Tags: ·

پاکستانی عوام کی اکثریت حکومتی کارکردگی سے غیر مطمئن ہے ‘ زرداری کی مقبولیت کم ہو کر 32 اور نواز شریف کی 79 فی صد رہ گئی ۔۔ تازہ سروے رپورٹ

June 18th, 2010 · No Comments · پاکستان

صدر زرداری کی عوامی مقبولیت مزید کم ہوکر صرف32 فی صد رہ گئی
نواز شریف کو 79 فیصد،وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی کو67 فی صد لوگ پسند کرتے ہیں
۔61 فی صد عوام سپریم کورٹ کے چیف جسٹس افتخار چودھری کی حمایت کرتے ہیں
۔76 فی صد عوام نے ملک کے لیے میڈیا کے کردار کوسراہا،صرف10 فیصد طالبان کو پسندکرتی ہے
امریکی ادارے ’’ پیو ریسرچ سینٹر ‘‘ کی تازہ سروے رپورٹ
واشنگٹن ‘ امریکی ادارے ’’ پیو ریسرچ سینٹر ‘‘ کے تازہ سروے کے مطابق پاکستانی عوام کی اکثریت حکومت کی کارکردگی سے مطمئن نہیں اور صدر زرداری کی عوامی مقبولیت مزید کم ہوکر صرف32 فی صد رہ گئی ہے جبکہنواز شریف کو 79 فیصد،وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی کو67 فی صد لوگ پسند کرتے ہیں اور 61 فی صد عوام سپریم کورٹ کے چیف جسٹس افتخار چودھری کی حمایت کرتے ہیں۔واشنگٹن کے پیو ریسرچ سینٹر کی جانب سے جاری کیے گئے سروے میں کہا گیا ہے کہ پاکستانی عوام کا خیال ہے کہ ان کے ملک کو بحران کا سامنا ہے اور ان کی حکومت کی ساکھ اتنی کم ہو چکی ہے جو پورے عشرے کی انتہائی کم سطح ہے۔صدر آصف علی زرداری کی مقبولیت گزشتہ سال سے بھی کم ہو گئی ہے اور اب محض 32 فی صد عوام انہیں پسندیدگی کی نظر سے دیکھتے ہیں۔ان کے مقابلے میں حزب اختلاف کے رہنما نواز شریف کو 79 فیصداور وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی کو67 فی صد لوگ پسند کرتے ہیں جبکہ 61 فی صد عوام سپریم کورٹ کے چیف جسٹس افتخار چودھری کی حمایت کرتے ہیں۔ملک کے 89 فی صد عوام اپنے نسلی یا برادری سے وابستگی کے بجائے سب سے پہلے پاکستانی ہونے پر فخر کرتے ہیں۔86فی صد پاکستانیوں کی رائے میں مسلح افواج کسی بھی دوسرے طبقے کی بہ نسبت بہتر اثرورسوخ رکھتی ہے۔76 فی صد عوام نے ملک کے لیے میڈیا کے کردار کوسراہتے ہوئے اس کی تعریف کی۔ سروے کے مطابق پاکستانیوں کی صرف دس فیصد تعداد طالبان کو پسندکرتی ہے جبکہ القاعدہ کی حمایت محض نو فی صد ہے۔ستر فیصد نے طالبان کے لیے ناپسندیدگی کا اظہار کیا جبکہ 61 فی صدنے واضح طور پر القاعدہ کی مخالفت کی نیز کسی بھی اسلامی ملک میں خود کش حملوں کی حمایت نہیں پائی گئی۔

Tags: ··

صدر کے 2 عہدوں اور گورنر سلمان تاثر کی اہلیت کے خلاف درخواستوں کی سماعت 14 جون تک ملتوی

May 27th, 2010 · No Comments · پاکستان

لاہور‘ لاہور ہائیکورٹ نے صدر آصف علی زرداری کے 2 عہدوں اور گورنر پنجاب سلمان تاثیر کی اہلیت کے خلاف درخواستوں کی سماعت 14 جون تک ملتوی کردی۔ تفصیلات کے مطابق جسٹس اعجاز احمد چودھری کی سربراہی میں صدر مملکت کے 2 عہدوں کے خلاف فل بنچ کی سماعت کے دوران وفاقی حکومت اور صدر آصف علی زرداری کی جانب سے وکلاء کے پینل نے عدالت عالیہ سے استدعا کی کہ آج وکلاء کی ہڑتال ہے جبکہ انہیں عدالت میں جواب بھی داخل کرنا ہے اس لئے ان درخواستوں کی سماعت ملتوی کی جائے۔ عدالت نے وکلاء کی استدعا منظور کرتے ہوئے کارروائی 14 جون تک ملتوی کردی جبکہ بعدازاں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے درخواستوں کی پیروی کرنے والے سینئر وکیل اے کے ڈوگر نے امید ظاہر کی کہ آئندہ سماعت پر مقدمہ کی باقاعدہ سماعت شروع ہو جائے گی۔

Tags: ·