Urdu News - Online Urdu News Paper

Urdu News, Online Urdu Latest News Pakistan & World Newspaper

Urdu News - Online Urdu News Paper header image 4
Pages: 1 2 3 4 Next

ریسکیو 15بلڈنگ کے باہر خودکش حملہ میں بھارت کے ملوث ہونے کو خارج ازامکان قرار نہیں دیا جاسکتا۔صوبائی وزیر قانون رانا ثناء اللہ خان

May 27th, 2009 · No Comments

٭ ۔ ۔ ۔ سانحہ میں 16افراد کے جاں بحق اور 90زخمیوں کی تصدیق ہوچکی، 10کی حالت تشویشناک ہے

لاہور۔ صوبائی وزیر قانون رانا ثناء اللہ خان نے کہا ہے کہ ریسکیو 15بلڈنگ کے باہر ہونے والے خودکش حملے میں بھارت سمیت غیر ملکی ہاتھ کے ملوث ہونے کو خارج ازامکان قرار نہیں دیا جاسکتا۔ انہوں نے کہا کہ اس خودکش حملے میں 16افراد جاں بحق اور 90زخمی ہوئے ہیں جن میں سے دس کی حالت تشویشناک ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے جائے وقوعہ کا جائزہ لینے کے بعد صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ رانا ثناء اللہ خان نے بتایا کہ حملہ آور ہائی ایس وین میں آئے ۔ وین میں بھاری مقدار میں دھماکہ خیز مواد بھرا ہوا تھا۔ حملہ آورز میں سے دو افراد نے گاڑی سے نیچے اتر کر ریسکیو 15اور سی سی پی او کے دفتر کے باہر تعینات پولیس اہلکاروں پر فائرنگ کی اور گاڑی کیلئے راستہ بنانے کی کوشش کی لیکن رکاوٹیں کھڑی ہونے کے باعث گاڑی مزید آگے نہ جاسکی اور گاڑی دھماکہ کے ساتھ اڑ گئی جس سے ریسکیو 15کی عمارت مکمل طور پر تباہ ہوگئی۔ انہوں نے بتایا کہ اب تک 16افراد کے جاں بحق اور 90کے زخمی ہونے کی تصدیق ہوچکی ہے جن میں سے 10افراد کی حالت نازک ہے۔ انہوں نے کہا کہ جن تین مشتبہ افراد کو گرفتار کیا گیا ہے بغیر تفتیش کے نہیں کہا جاسکتا کہ مذکورہ افراد واقعی دہشت گرد ہیں یا کہ ان کا تعلق عام شہریوں سے ہے تاہم اس بارے میں تحقیقات کے بعد ہی اصل صورتحال واضح ہوسکتی ہے۔ انہوں نے کہاکہ دہشت گردی کے اس واقعہ کا تسلسل سری لنکن کرکٹ ٹیم پر حملہ اور مناواں پولیس ٹریننگ سنٹر پر حملہ سے ملتا ہے اور یہ وہی ملزم ہیں جو پاکستان کو عدم استحکام کا شکار کرنا چاہتے ہیں اور انہیں بیرونی قوتوں کی ٹیکنیکل مالی سپورٹ حاصل ہے۔ انہوں نے کہاکہ میڈیا کا ایسے واقعات کو سیکورٹی لیپس قرار دیتے ہوئے اس بات کو نظر انداز نہیں کرنا چاہئے کہ دہشت گرد سیکورٹی اہلکاروں کو ٹارگٹ کررہے ہیں۔ ان سیکورٹی اہلکاروں کی حوصلہ افزائی کی جانی چاہئے۔ تاہم اس واقعہ کے بعد پولیس اور سیکورٹی اداروں کی صلاحیتوں کو مزید مؤثر بنانے کیلئے اقدامات کا جائزہ لیا جائے گا

Tags: , , ,

اوپر والی خبر سے ملتی جلتی خبریں دیکھیں

Tags: Pakistan , Urdu , Urdu News

خارجہ پالیسی اور آئینی معاملات پر اختلافات کے باعث (ن) لیگ وفاقی کابینہ میں شامل نہیں ہوگی ۔ رانا ثناء اللہ خان

May 11th, 2009 · No Comments

٭۔ ۔ ۔ پیپلز پارٹی کے ساتھ پنجاب میں پاور شیئرنگ کے معاملات طے پاگئے، جلد کابینہ میں توسیع ہوگی

اوکاڑہ ۔ صوبائی وزیر قانون رانا ثناء اﷲ خان نے کہا ہے کہ پنجاب میں مسلم لیگ (ن) کے پارٹی کے ساتھ پاور شیئرنگ معاملات پا چکے ہیں تاہم (ن) لیگ خارجہ پالیسی اور آئینی معاملات پر اختلافات کے باعث وفاقی کابینہ کا حصہ نہیں بنے گی۔ صوبائی کابینہ میں توصیح دونوں جماعتوں کے مشترکہ اجلاس کے بعد ہو گی۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے آج یہاں مزارعین کے تنازعات کے حل کیلئے منعقدہ اعلی سطحی اجلاس سے قبل صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ صوبائی وزیر نے کہاکہ ڈرون حملوں پر مسلم لیگ(ن) اور پیپلز پارٹی کے موقف میں واضح تضاد ہے۔ (ن) لیگ کبھی کسی معاملے پر بیرونی ڈکٹیشن نہیں لیتی۔ پنجاب میں پیپلز پارٹی کے ساتھ پاور شیئرنگ کے معاملات طے پاچکے ہیں البتہ دونوں جماعتوں کی مشترکہ کمیٹی کے فیصلہ کا انتظار ہے جس کے بعد صوبائی کابینہ میں توسیع کی جائے گی۔ ایک سوال پر انہوں نے کہا کہ مزارعین کے تنازعات کے حل کیلئے وزیراعلی نے مجھے اور سردار ذوالفقار کھوسہ کو یہ اسائنمنٹ دی ہے کہ ہم سیاست اور انتظامی بنیادوں پر مزارعین کے مسائل حل کریں۔

Tags: , ,

اوپر والی خبر سے ملتی جلتی خبریں دیکھیں

Tags: Pakistan , Urdu , Urdu News

رحمن ملک کے بیان سے اتفاق نہیں کرتا لاہور میں دہشت گردی کے واقعات میں بھارث ملوث نہیں ہے ۔ رانا ثناء اللہ

April 14th, 2009 · No Comments

٭۔ ۔ ۔ ملزموں نے دہشت گردی کی تربیت امرتسر میں حاصل کی اور وہ تین بار بھارت گئے

٭۔ ۔ ۔ سکولوں میں دہشت گردی کی افواہوں پر سکیوٹری بڑھادی ہے، ریسکیو 1122 کو صوبہ میں پھیلایا جائے گا

لاہور ۔ صوبائی وزیر قانون رانا ثناء اللہ خان نے کہا ہے کہ لبرٹی چوک اور مناواں پولیس ٹریننگ سنٹر پر حملوں میں بھارت ملوث ہے۔ دہشت گردو ںنے تربیت امرتسر میں حاصل کی۔ انہوں نے کہا کہ وہ مشیر داخلہ رحمن ملک کے اس بیان سے اتفاق نہیں کرتے کہ ان حملوں میں بھارت ملوث نہیں ہے۔ وہ ریسکیو 1122 پولیس کی پاسنگ آؤٹ پریڈ کے بعد صحافیوں سے گفتگو کر رہے تھے۔ پریڈ میں چھ خواتین ریسکیو کارکنوں نے بھی شرکت کی۔ رانا ثناء اللہ نے کہا کہ پکڑے جانے والے دہشت گردوں اور ان کے رشتہ داروں سے تفتیش کے دوران واضح اشارے ملے ہیں کہ صوبائی دارالحکومت میں دہشت گردی کے ان دو واقعات میں بھارت ملوث ہے۔ انہوں نے کہا کہ تفتیش کے دوران ملزموں نے بتایا ہے کہ انہوں نے دہشت گردی کی تربیت بھارت کے شہر امر تسر میں حاصل کی اور اس مقصد کے لئے وہ تین بار بھارت گئے ۔ رانا ثناء اللہ خان نے کہا کہ یہ پراپیگنڈہ بھی کیا جارہا ہے کہ پنجاب کے پرائیویٹ سکولوں میں دہشت گردی کا خطرہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ ان افواہوں کے پیش نظر ان سکولوں میں سکیورٹی بڑھادی گئی ہے اور سکول انتظامیہ سے بھی کہا ہے کہ وہ خود بھی چوکس رہے اور ازخود بھی حفاظتی انتظامات کریں۔ انہوں نے کہا کہ ریسکیو 1122 دیگر ا ضلاع میں بھی جلد شروع کی جائے گی اور اسے پورے پنجاب میں پھیلایا جائے گا

Tags: ,

اوپر والی خبر سے ملتی جلتی خبریں دیکھیں

Tags: Pakistan , Urdu , Urdu News

گورنر پنجاب عارضی اختیارات احکامات جاری کرنے کے لئے استعمال سے باز رہیں ۔مسلم لیگ ن

March 25th, 2009 · No Comments

٭۔ ۔ ۔ گورنر پنجاب اپنے عارضی اختیارات کو مستقل بنیادوں پر احکامات جاری کرنے کے لئے استعمال سے باز رہیں ، ان کے غیر قانونی احکامات پر عملدرآمد کرنے والوں کا محاسبہ کیا جائے گا

٭۔ ۔ ۔ ہائی کورٹ میں 16 ججوں کو آئین کے آرٹیکل 193 کی خلاف ورزی کرتے ہوئے تعینات کیا گیا جبکہ مارکیٹ کمیٹیوں کے 150 چیئرمینوں کو کھڈے لائن لگادیا گیا

٭۔ ۔ ۔ لانگ مارچ کے موقع پر سندھ سے پانچ سو بدمعاشوں کو بلایا گیا ، خود وزیر اعظم نے تسلیم کیا ہے کہ عدلیہ بحال نہ کی جاتی تو ملک کی سلامتی کو شدید خطرہ تھا، سلمان تاثیر نے اپنی کرسی بچانے کے لئے سب کچھ داؤ پر لگا دیا۔ سردارذوالفقار علی خان کھوسہ اور رانا ثناء اللہ خان کی پریس کانفرنس

لاہور۔ سابق وزیر قانون رانا ثناء اللہ خان نے کہا ہے کہ گورنر پنجاب سلمان تاثیر اپنے عارضی اختیارات کو مستقل بنیادوں کے احکامات کیلئے استعمال کرنے سے باز رہیں۔ صوبائی انتظامیہ نے اگر ان کے غیر آئینی وغیر قانونی احکامات پر عمل درآمد کیا تو نتائج کے خود ذمہ دار ہوں گے۔ خوش قسمتی سے لانگ مارچ کے موقع پر سندھ سے منگوائے گئے پانچ سو بدمعاشوں سے پنجاب محفوظ رہا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گذشتہ روز پنجاب اسمبلی میںصوبائی صدر سردار ذوالفقار عی خان کھوسہ کے ہمراہ پریس کانفرنس میں کیا۔ انہوں نے چیف سیکرٹری اور دیگر صوبائی افسران کو وارننگ دیتے ہوئے کہا کہ انہوں نے صرف 29دن کیلئے نوکری نہیں کرنی لہذا عارضی گورنر راج میں کئے گئے غیر قانونی فیصلوں پر عملدرآمد نہ کریں وگرنہ معزز ایوان اور عوام ان کی بازپرس کرسکتے ہیں۔ انہوں نے گورنر پنجاب کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ ایک ماہ سے مسلسل تبادلوں کا جاری سلسلہ فی الفور روک دیا جائے۔ میاں شہبازشریف نے میرٹ پر بھرتیاں کی تھیں جس کی واضح مثال پنجاب پولیس میں بھرتیاں ہیں۔ چالیس ہزار ایجوکیٹرز کی ملازمتیں سابق دور میں میرٹ پر ہوئی تھیں مگر گورنر سلمان تاثیر بغیر میرٹ کے بھرتیوں کے خواہش مند ہیں۔ وہ کلاس فور کی ملازمتوں پر جیالوں کو بھرتی کرنے کا فیصلہ کرچکے ہیں۔ جبکہ ڈیڑھ سو کے قریب چیئرمین مارکیٹ کمیٹیوں کو کھڈے لائن لگا کر من پسند افراد کو ان عہدوں پر تعینات کیا جارہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ عدالت عالیہ میں آئین کے آرٹیکل 193کی خلاف ورزی کرتے ہوئے 16ججوں کوتعینات کیا گیا ہے ۔ ایک سوال پر انہوں نے بتایا کہ میاں برادران کے خلاف نااہلی کیس پر نظر ثانی کیلئے (ن) لیگ نے لارجر بینچ کیلئے درخواست دے رکھی ہے امید ہے اس میں پی سی او ججز کو شامل نہیں کیا جائے گا اور ہمیں انصاف ملے گا۔ عبدالحمید ڈوگر کے تمام فیصلوں کے خلاف سپریم کورٹ میں درخواستیں آنا شروع ہوگئی ہیں۔ سردار ذوالفقار کھوسہ نے بتایا کہ انسپکٹر جنرل پولیس پنجاب اور چیف سیکرٹری کو حکومت نے اڑھائی سو اراکین اسمبلی پر دباؤ ڈال کر حمایت حاصل کرنے کا ٹاسک دیا گیا تھا جس میں دونوں بری طرح ناکام رہے۔ ایمرجنسی کی صورت میں فوج یا رینجرز سے مدد لی جاتی ہے مگر لانگ مارچ کے موقع پر سندھ سے پانچ سو بدمعاشوں کو طلب کرنا سمجھ سے باہر ہے ۔اللہ تعالی کا خصوصی کرم ہوا کہ پنجاب ان کے شہر سے محفوظ رہا ۔ وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی نے اپنی تقریر میں تسلیم کیا تھا کہ لانگ مارچ کے موقع پر ملک کی سلامتی کو خطرہ تھا مگر گورنر پنجاب سلمان تاثیر نے اپنی کرسی بچانے کی خاطر ملکی سلامتی کو داؤ پر لگایا دیا تھا ۔ ہمارا صدر پاکستان آصف علی زرداری سے کوئی ذاتی اختلاف نہیں ۔ ہم چاہتے ہیں کہ وہ میثاق جمہوریت معاہدہ پر عملدرآمد کریں مسلم لیگ ن بھرپور انداز میں تعاون کرے گی ۔ ہمیں حکومت میں شرکت کا کوئی لالچ نہیں ۔ ملک کی تعمیر و ترقی کے لئے ہمہ وقت تعاون کیلئے تیار ہیں ۔سترھویں ترمیم کے خاتمے کیلئے تمام اراکین حمایت کریں گے ۔ کسی میں جرات نہیںکہ وہ ایسے دورس اور مثبت عمل کی تائید نہ کرے ۔ انہوں نے وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی کو پارلیمانی پارٹی میں تقریر کا خیر مقدم کیا ۔انہوں نے کہا کہ میاں برادران کی نا اہلی پر حکومت موجودتھی ۔ گورنر کو چاہیے تھا کہ اسمبلی کا اجلاس بلوا کر ن لیگ کو حکومت بنانے کی دعوت دیتے مگر ان پر بھوت سوار تھا صوبے کا چیف ایگزیکٹو بننے کا ۔

Tags: , ,

اوپر والی خبر سے ملتی جلتی خبریں دیکھیں

Tags: Pakistan , Urdu , Urdu News

مسلم لیگ (ن) نے گورنر کو پنجاب اسمبلی کا اجلاس بلانے پر مجبور کرنے کے لیے لاکھوں افراد کے گورنر ہاؤس کی طرف مارچ اور دھرنا کی دھمکی دے دی

March 19th, 2009 · No Comments

٭۔ ۔ ۔ رکاوٹوں کو توڑتے ہوئے پرائیویٹ گاڑی میں گھر سے نکلے تھے۔ انہوں نے کہا کہ گورنر نے اسمبلی تحلیل کی تو اسے سپریم کورٹ میں چیلنج کیا جائے گا

٭۔ ۔ ۔ دھرنا میں پیپلز پارٹی کے ارکان بھی شرکت کریں گے، گورنر آئین کی خود ساختہ تشریح کر رہے ہیں، اسمبلی ٹوٹی تو سپریم کورٹ جائیں گے

٭۔ ۔ ۔ غیر آئینی گورنر راج کے احکامات نہ ماننے والے پولیس افسران کو سلام، آئین میں کہیں پارٹیوں کے اتحاد کا ذکر نہیں ہے۔ رانا ثناء اللہ کی پریس کانفرنس

لاہور ۔ گورنر پنجاب نے نئے وزیر اعلی کے انتخاب کے لیے پنجاب اسمبلی ک اجلاس طلب نہ کیا تو پنجاب اسمبلی کے 208 سے زائد ارکان اپنے حلقوں کے عوام کے ساتھ گورنر ہاؤس لاہور کی طرف مارچ کریں گے اور پنجاب اسمبلی کا اجلاس طلب کرنے تک گورنر ہاؤس کے سامنے دھرنا دیں گے۔ گورنر پنجاب دو سیاسی جماعتوں کے اتحاد کی شرط عائد کر کے آئین کی خود ساختہ تشریح کر رہے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے پنجاب اسمبلی میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ رانا ثناء اللہ خان نے کہا کہ گورنر پنجاب سلمان تاثیر اور ایوان صدر آج بھی پنجاب کے 9 کروڑ عوام کے حقوق غصب کئے بیٹھے ہیں۔ وزیر اعظم مفاہمت کی بات کرتے ہیں جبکہ صدر اور گورنر ہٹ دھرمی پر قائم ہیں۔ انہوں نے کہا کہ گورنر آئین کی خود ساختہ تشریح کر رہے ہیں۔ آئین میں کہیں درج نہیں ہے کہ وزیر اعلی باقاعدہ ایوان کے انتخاب کے لیے دو یا زیادہ سیاسی جماعتوں کا ملنا ضروری ہے۔ انہوں نے آئین کے آرٹیکل 130 کی سب کلاز دو اے پڑھ کر سنایا جس کے تحت اگر کسی وجہ سے صوبہ میں وزیر اعلی کا عہدہ خالی ہوتا ہے تو گورنر پنجاب فوری طور پر اسمبلی کا اجلاس بلانے کے پابند ہیں اور آئین میں پارٹی کا لفظ نہیں بلکہ ممبرز کا لفظ استعمال کیا گیا ہے جو نئے قائد ایوان کا چناؤ کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب میں گورنر راج نافذ کر کے صوبہ کے 9 کروڑ عوام کے حقوق غصب کئے گئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ (ن) کی پارلیمانی پارٹی کے اجلاس میں شرکت کرنے والے 208 ارکان اسمبلی کے علاوہ بہت سے پیپلز پارٹی کے ارکان اسمبلی نے بھی فیصلہ کیا ہے کہ اگر گورنر پنجاب نے عوامی مینڈیٹ کی توہین جاری رکھی اور اپنی انا پر قائم رہے تو یہ تمام ارکان لاکھوں کارکنوں سمیت لاہور کی طرف مارچ کریں گے اور گورنر ہاؤس کے سامنے اس وقت تک دھرنا دیں گے جب تک گورنر پنجاب اسمبلی کا اجلاس طلب نہیں کرلیں گے۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب اسمبلی میں گ ورنر راج صرف ہارس ٹریڈنگ کے لئے لگایا گیا اور بوریوں کے منہ کھول دینے کے باوجود یہ صرف مسلم لیگ (ن) کی ایک رکن اسمبلی لیلیٰ مقدس کو توڑسکے جسے وعدہ سے بہت کم پیسے دیئے گئے ہیں۔ اس سوال پر کہ مسلم لیگ (ن) اپنے حمایت یافتہ ارکان کی فہرست گورنر کو کیوں پیش نہیں کرتی یا پھر پنجاب اسمبلی کا اجلاس بلانے کیلئے عدلیہ سے رجوع کیوں نہیں کرتے۔ انہوں نے کہا کہ یہ معاملہ عدالت میں بھی حل نہیں کیا جاتا۔ انہوں نے ان پولیس افسران بالخصوص گوجرانوالہ کے ایس پی اطہر وحید اور شیخوپورہ کے کانسٹیبل کو خراج تحسین پیش کیا جنہوں نے انتظامیہ کے غیر قانونی احکامات ماننے سے انکار کیا۔ انہوں نے کہا کہ گورنر راج غیر قانونی ہے اس لئے موجودہ پولیس وسول افسران بھی گورنر کے غیر آئینی وغیر قانونی احکامات تسلیم نہ کریں۔ انہوں نے اس ڈی آئی جی اینٹی کرپشن کو بھی خراج تحسین پیش کیا جس نے موجودہ ڈی جی پی آر کے خلاف 55کروڑ اور 30کروڑ کے دو کرپشن کے کیسوں کو داخل دفتر کرنے سے انکار کردیا جس کے باعث ان کا تبادلہ کردیا گیا۔ انہوں نے گورنر کے اس دعوے کو بھی غلط قرار دیا کہ میاں نوازشریف کونظر بند نہیں کیا گیا اور انہیں بلٹ پروف گاڑی سمیت سیکورٹی بھی جلوس کے دوران فراہم کی گئی۔ رانا ثناء اللہ نے کہا کہ اگر میاں نوازشریف کو نظر انداز نہیں کیا گیا تھا تو ان کے گھر کے باہر بھاری پولیس کی نفری کیوں تعینات کی گئی، خاردار تار اور رکاوٹیں کس مقصد کیلئے کھڑی کی گئیں۔ انہوں نے کہا کہ 15مارچ کو میاں نوازشریف رکاوٹوں کو توڑتے ہوئے پرائیویٹ گاڑی میں گھر سے نکلے تھے۔ انہوں نے کہا کہ گورنر نے اسمبلی تحلیل کی تو اسے سپریم کورٹ میں چیلنج کیا جائے گا۔

Tags: , , , ,

اوپر والی خبر سے ملتی جلتی خبریں دیکھیں

Tags: Pakistan , Urdu , Urdu News